You are currently viewing ڈگری ڈگی ہوتی ہے،امریکی خاتون اول بھی جعلی نکلیں

ڈگری ڈگی ہوتی ہے،امریکی خاتون اول بھی جعلی نکلیں

  • Post author:
  • Post category:دنیا
  • Post last modified:24/01/2017 16:04
  • Reading time:1 mins read

واشنگٹن (ڈیسک ) وائٹ ہاؤس کی سرکاری ویب سائٹس سے امریکی خاتون اول  ملیا نا ٹرمپ کے کوائف تبدیل کردیئے گئے ہیں ۔

تحقیقاتی صحافیوں کی تنظیم انویسٹیگیٹو جرنلسٹس بیورو کی معلومات کے مطابق 20 جنوری کو خاتون اول کی تعلیمی قابلیت آرکیٹیکٹ اینڈ ڈیزائننگ میں پنسلوانیا یونیورسٹی سے گریجویشن بتائی گئی تھیں تاہم تحقیقاتی صحافیوں کو یونیورسٹیوں کے ریکارڈ کی چھان بین سے پتہ چلا کہ ملیانا نے یونیورسٹی میں داخلہ ضرور لیا تھا مگر کوئی امتحان دیئے بنا چلی گئی  تھیں  ۔نئے کوائف میں خاتون اول کو مصلح قوم ظاہر کیا جارہا ہے جس کی بنیاد یہ بتائی گئی ہے کہ انہون نے  نیو یارک کی ہارڈ سوسائٹی کو امراض قلب میں تحقیقات کے لئے 10 لاکھ 70 ہزار ڈالر کا عطیہ دیا ہے۔

 معلومات کے مطابق یہ رقم بھی ڈونلڈ ٹرمپ نے دی تھی خود ملیانا نے ایک ڈالر بھی کسی کو نہیں دیا نہ ہی شادی سے پہلے وہ اتنی دولتمند تھیں کہ  امریکی ٹیکس ڈیپارٹمنٹ کےمطابق ماڈلنگ اور ٹی وی ڈراموں سے ان کی آمدنی اتنی نہیں تھیں کہ وہ ہزار ڈالر بھی عطیہ کرسکیں نئی  ویب سائٹ میں ملیانا ٹرمپ کو امریکہ کی معروف جیولرز کمپنی کی مالکن ظاہر کیا گیا ہے جبکہ کمپنی کا کہنا ہے کہ انھوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کے کہنے پر ان کی بیوی کو فیشن کی دنیا میں مشہور کروانے کےلئے اپنی برانڈ کا نام ان سے منسوب کردیا ہے زاتی طور پر ملیا نا کا ان کے جیولری بزنس سے کوئی تعلق نہیں ہے دریں اثناء فرسٹ لیڈی کے ترجمان کا کہنا ہے  حقیقت کچھ بھی ہو حقیقت یہ ہے کہ وہ خاتون اول ہیں ۔