You are currently viewing نگورنو کاراباخ  جنگ میں آذربائیجان کی شاندار فتح، دونوں ممالک کے درمیان امن معاہدہ  طے

نگورنو کاراباخ جنگ میں آذربائیجان کی شاندار فتح، دونوں ممالک کے درمیان امن معاہدہ طے

  • Post author:
  • Post category:دنیا
  • Post last modified:11/11/2020 11:42
  • Reading time:1 mins read

باکو(ڈیسک)آذربائیجا اور آرمینیا کے درمیان روس کی معاونت  متنازعہ علاقے نگورنو کاراباخ پر تنازع کو مستقل بنیادوں پر حل کرنے کے لیے معاہدہ طے پا گیا ہے۔

نگورنو کاراباخ  جنگ میں آذربائیجان کی شاندار فتح، بلا آخر آرمینیا نے شکست تسلیم کر تے ہوئے  جنگ بندی کا اعلان کر دیا ، آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان تقریباً 6 ہفتے تک جاری رہنے والی جنگ میں اب ہزاروں  افراد مارے جاچکے ہیں۔ روس کی معاونت سے دونوں  ممالک کے  درمیان امن معاہدہ بھی ہو گیا ہے ،  معاہدے پر آذری صدر الہام علیوف، آرمینیائی وزیر اعظم نکول پشنیان اور روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے دستخط کیے ہیں۔امن معاہدے کے بعد  آذربائیجان کے صدر الہام علیوف نے فتح کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ آج کا تاریخی دن ہے اور نگورنو کاراباخ کا تنازع اختتام کو پہنچ گیا ہے شاندار فتح پر قوم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں ۔

فتح کے اعلان کے بعد آذربائیجان کے دارالحکومت باکو سمیت کئی شہروں میں  جگہ جگہ فتح کے جشن کی ریلیاں نکالی گئیں، آذری عوام نے اظہار یکجہتی کرنے پر ترکی اور پاکستان کے پرچم بھی لہرائے۔

دوسری جانب آرمینیائی وزیر اعظم نے شکست تسلیم کر تے ہوئے فوجی وسائل ختم ہونے کی وجہ سے معاہدہ کیا ہے اور یہ سمجھوتہ میرے لیے بھی تکلیف دہ ہے۔ اگر یہ معاہدہ نہ کرتے تو ہمیں مزید سنگین نتائج بھگتنا پڑتے۔

جس کے بعدآرمینیا کے  دارالحکومت یریوان میں معاہدے کے خلاف شہریوں نے احتجاج کیا، مظاہرین  نے  ری پبلک اسکوائر پر سرکاری عمارتوں اور پارلیمنٹ میں گھس کر ارکان سے فوری استعفوں کا مطالبہ کیا۔

معاہدے کے تحت روسی فوج کو کاراباخ بھیجا  گیا ہے  جو 5 سال تک وہاں رہیں گے  جبکہ اس دوران قیدیوں کا بھی تبادلہ کیا جائے گا۔

 

Staff Reporter

Rehmat Murad, holds Masters degree in Literature from University of Karachi. He is working as a journalist since 2016 covering national/international politics and crime.