You are currently viewing میں زندہ بچ سکتی ہوں، کے موضوع پر ثمینہ عارف علوی کا تقریب سے خطاب

میں زندہ بچ سکتی ہوں، کے موضوع پر ثمینہ عارف علوی کا تقریب سے خطاب

اسلام آباد (ڈیسک) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی اہلیہ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا ہے کہ چھاتی کے کینسر کے بارے میں آگاہی مہم سے لوگوں میں شعور اجاگر ہوا ہے اور لوگوں کو یہ بات باور کرانے میں کافی حد تک کامیاب ہوئے ہیں کہ جلد تشخیص میں ہی بریسٹ کینسر کا علاج ممکن ہے ۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو صحت کہانی کے زیر اہتمام میں زندہ بچ سکتی ہوں کے موضوع تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ چھاتی کے کینسر کے مریضوں کی مدد کیلئے جوبلی انشورنس کے تعاون سے کینسر پروٹیکشن پروگرام شروع کرنے پر صحت کہانی کو سراہتی ہوں، جس کی مدد سے مریضوں پر پڑنے والے مالیاتی بوجھ کو کم کیا جا سکے گا اور چھاتی کے کینسر کے علاج پر جو اخراجات آتے ہیں اس کے حوالے سے لوگوں کو انشورنس فراہم کی جائے گی ، اس پروگرام کے ساتھ مفت سکریننگ کی سہولیات بھی فراہم کرنا خوش آئند ہے کیونکہ بریسٹ کینسر کا علاج کافی مہنگا ہے اور ایک عام آدمی اپنے طور پر اس کا علاج کا بوجھ برداشت نہیں کر سکتا ۔
انہوں نے امید ظاہر کی کہ ایسے پروگراموں کو مستقبل میں مزید توسیع دی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ بریسٹ کینسر کے حوالے سے ہم گزشتہ 4 سال سے آگاہی پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں ،ہماری یہ کاوشیں رنگ لا رہی ہیں اور اب لوگوں میں اس مرض کے بارے میں آگاہی بڑھ رہی ہے ، آج سے چار سال پہلے اس موضوع پر بات کرنا ہمارے معاشرے میں ممنوع سمجھا جاتا تھا اور میڈیا پر بھی خواتین کے اس صحت کے معاملہ پر کھل کر بات نہیں کی جاتی تھی ، اس بیماری کے بارے میں لوگوں میں آگاہی کی بھی کمی تھی اور لوگوں کو اس بیماری کی علامات تک کا پتہ نہیں ہوتا تھا۔
انہوں نے کہا کہ بریسٹ کینسر خواتین میں پایا جانے والا عام کینسر ہے اور پاکستان میں ہر 9 میں سے ایک عورت کو یہ بیماری لاحق ہونے کا خطرہ ہے، پاکستان میں ہر سال تقریبا 90 ہزار سے ایک لاکھ کے قریب لوگوں میں بریسٹ کینسر کی تشخیص ہوتی ہے مگر افسوس کی بات یہ ہے کہ تقریبا 50 فیصد مریض اس بیماری کی وجہ سے موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں ، اگر ہم اس بیماری کی وجہ سے شرح اموات کا موازانہ دنیا کے امیر ممالک ممالک کے ساتھ کریں تو آپ کو پتہ چلے گا کہ وہاں پر سالانہ بچائو کی شرح تقریبا 80 فیصد ہے جبکہ پاکستان میں اس بیماری کی وجہ سے شرح اموات تقریبا 50 فیصد ہے ، یہ ایک بہت ہی خطرناک صورتحال ہے ۔

Nimra Jamali

Nimra Jamali is an emgerging content writter, who is writting for News Pakistan TV for quite some time now.