You are currently viewing مرکزی رہنمائوں سمیت 220عہدیدار پارٹی سے علیحدہ، پی ٹی آئی کا مستقبل سوالیہ نشان

مرکزی رہنمائوں سمیت 220عہدیدار پارٹی سے علیحدہ، پی ٹی آئی کا مستقبل سوالیہ نشان

اسلام آباد (ڈیسک ) کثیر تعداد میں پارٹی سے علیحدگی اختیار کرنے کے بعد پی ٹی آئی کا مستقبل سوالیہ نشان بن گیا۔
نو مئی کے جلائو گھیرائو اور پرتشدد واقعات کے بعد پی ٹی آئی کی سیاست میں جو تبدیلی آئی اس کے نتیجے میں اب تک 220اعلیٰ عہدے دار پارٹی سے علیحدگی کا اعلان کر چکے ہیں۔
قومی ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق 48 موجودہ اور سابق ایم این ایز جب کہ 31سابق وزرا و مشیر اور معاونین پی ٹی آئی کو خیرباد کہہ چکے ہیں۔
چاروں صوبوں کی اسمبلیوں سے 100کے قریب ایم پی ایز تحریک انصاف کا ساتھ چھوڑ چکے ، پنجاب سے 77ممبر ، کے پی کے سے 11، سندھ سے 8 اور بلوچستان سے 3ممبران صوبائی اسمبلی نے اپنے راستے جدا کر لیے ہیں۔
اسی طرح 52پارٹی عہدے دار پارٹی کی رکنیت اور عہدوں سے دستبرداری کا اعلان کر چکے ہیں، سینیٹ کے 3ممبران نے پی ٹی آئی کو بائے بائے کہہ دیا، پارٹی چھوڑنے والے تحریک انصاف کے مرکزی رہنمائوں میں فواد چوہدری، شیریں مزاری، عثمان بزدار، عامر کیانی، علی زیدی، عمران اسماعیل اور خسرو بختیار ، پرویز خٹک شامل ہیں۔ اسد عمر نے پارٹی کے تمام عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔
پی ٹی آئی کے ساتھ تاحال وفاداری نبھانے والوں میں سابق وزیر اعلیٰ پنجاب اور پی ٹی آئی کے صدر چوہدری پرویز الٰہی ، شاہ محمود قریشی اور مراد سعید قابل ذکر ہیں۔

Nimra Jamali

Nimra Jamali is an emerging content writer, who is writing for News Pakistan TV for quite some time now.