You are currently viewing متوفی کی بیٹی جائیداد کی وارث قرار، سپریم کورٹ نے چچا کی درخواست مسترد کردی

متوفی کی بیٹی جائیداد کی وارث قرار، سپریم کورٹ نے چچا کی درخواست مسترد کردی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سپریم کورٹ نے متوفی کی بیٹی کو جائیداد کا وارث قرار دینے کے فیصلے پر چچا کی نظرثانی کی درخواست مسترد کردی۔
چیف جسٹس قاضی فائز عیسٰی کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے درخواست پر سماعت کی جس میں تلہ گنگ کے رہائشی منیرحسین نے بھائی کی وفات کے بعد جائیداد کی تقسیم کا دعویٰ کیا تھا اور منیرحسین نے بھائی کی بیٹی کو سوتیلی قرار دلوانے اور وراثت کی حقدارنہ ہونے کی استدعا کی تھی۔
عدالت نے بھتیجی کو وراثت دینے کے فیصلے پر چچا کی نظرثانی کی درخواست مسترد کردی اور ریونیو اتھارٹیز کو فیصلے پر عملدرآمد کا بھی حکم دے دیا۔
چیف جسٹس قاضی فائز عیسٰی نے کہا کہ لڑکی طوبیٰ شہاب کو اس کے چچا نے زمین کےلیے مقدمے بازی میں پھنسایا، 17 سال تک بیٹی باپ کے گھر میں رہی اس وقت کسی نے چیلنج نہیں کیا، اس مقدمے بازی کا مقصد بیٹیوں کو زمین نہ دینا اور زمین کی ہوس ہے۔
جسٹس قاضی فائز عیسٰی نے کہا کہ بہنوں کو جائیداد سے نکالنے کے لیے بھائی سوتیلا کہہ دیتے ہیں، جائیداد مرنے والے اظہر حسین کی تھی، درخواست گزار کی نہیں، ایسی مقدمے بازی کا راستہ ہمیشہ کے لیے بند کرنا ہوگا۔
چیف جسٹس نے مزید کہا کہ بچے کی پہچان کا حق صرف خاتون رکھتی ہے ۔
عدالت نے کہا کہ ابھی تک عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہیں کیا گیا، ہائیکورٹ کے فیصلے پر ابھی تک عملدرآمد کیوں نہیں ہوا؟ نظرثانی کیس کے زیرالتوا ہونے کا مقصد نہیں کہ مرکزی فیصلہ پر عمل نہیں کرنا۔

Staff Reporter

Rehmat Murad, holds Masters degree in Literature from University of Karachi. He is working as a journalist since 2016 covering national/international politics and crime.