You are currently viewing دوران عدت نکاح کیس: چیئرمین پی ٹی آئی کا ہائیکورٹ سے رجوع

دوران عدت نکاح کیس: چیئرمین پی ٹی آئی کا ہائیکورٹ سے رجوع

اسلام آباد (ڈیسک) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے دوران عدت نکاح کا کیس قابل سماعت قرار دینےکے فیصلے کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کردی۔
خیال رہےکہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد نےگزشتہ روز چیئرمین پاکستان تحریک انصاف کے خلاف غیر شرعی نکاح کیس قابل سماعت قرار دیا تھا۔
ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد کے جج قدرت اللہ نےعمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کو کل 20 جولائی کو طلب کیا ہے۔
درخواست گزارکا موقف ہےکہ چیئرمین پی ٹی آئی سے نکاح کے وقت بشریٰ بی بی کی عدت مکمل نہیں ہوئی تھی، نکاح لاہور میں ہوا لیکن دونوں بنی گالا میں رہ رہے تھے، دونوں نے پہلے نکاح کے بعدکافی وقت بنی گالا میں گزارا۔
خیال رہےکہ نکاح خواں مفتی محمد سعید نے نکاح سے متعلق 18جنوری 2023 کو بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ جنوری 2018 میں لاہور ڈیفنس میں عمران خان اور بشریٰ بی بی کا نکاح پڑھایا۔
عون چوہدری اور ذلفی بخاری بطور دو گواہان تقریب میں شریک ہوئے۔
مفتی سعید نے بیان میں کہا کہ انہوں نے نکاح سے قبل دریافت کیا کہ بشریٰ بی بی شرعی طور پر نکاح کے قابل ہیں یا نہیں۔
بشریٰ بی بی کے ہمراہ موجود خواتین کا جواب ملنے کے بعد ان کا نکاح عمران خان سے پڑھا دیا۔
مفتی سعید نے بتایا کہ بعد میں مختلف ذرائع سے معلوم ہوا کہ بشریٰ بی بی نے سابقہ شوہر سے طلاق کے بعد عدت پوری نہیں کی ۔
جس کے بعد انہوں نے ایک ماہ بعد عمران خان اور بشریٰ بی بی کو دوبارہ طلب کیا اور بشریٰ بی بی کا شرعی طور پر عدت پوری ہونے کے بعد دوبارہ نکاح پڑھایا۔