You are currently viewing ایک وقت ایسا تھا پاکستانی ڈرامہ دنیا بھر میں مقبول تھا، توقیر ناصر

ایک وقت ایسا تھا پاکستانی ڈرامہ دنیا بھر میں مقبول تھا، توقیر ناصر

اسلام آباد (ڈیسک) پاکستان کے نامور اداکار سابق ڈائریکٹر جنرل پاکستان نیشنل کونسل آف دی آرٹس (پی این سی اے) توقیر ناصر نے کہا ہے کہ پاکستانی اداکار کسی سے کم نہیں اورایک وقت ایسا تھا کہ پاکستانی ڈرامہ دنیا بھر میں مقبول تھا، بالی ووڈ کے ایک مشہور فلم ڈائریکٹر نے ان کے ڈرامہ سیریل کی نقل کی تھی اور ایک اور سپر سٹار اداکار نے بھی 13 اقساط پر مشتمل سیریل پرواز اور اس میں میری نقل کی تھی۔
توقیر ناصر جنہیں رواں سال اداکاری پر ستارہ امتیاز سے بھی نوازا گیا، نے ایک انٹرویو میں کہا کہ یہ ان کے لیے فخر کی بات ہے کہ بالی ووڈ کے نامور اداکاروں نے ان کی اداکاری اور سیریلز کی نقل کی۔ انہوں نے کہا کہ وہ 2000 میں تمغہ امتیاز حاصل کرنے والے سب سے کم عمر اداکار تھے اب انہیں دوسرے بڑے ایوارڈ ستارہ امتیاز سے بھی نوازا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ برصغیر کی تقسیم کے دوران ان کے والدین کی ہجرت ان کے پورے کیرئیر اور زندگی میں تحریک کا باعث بنی۔ توقیر ناصر نے بتایا کہ انہوں نے حال ہی میں سابق وزیراعظم محمد نواز شریف سے برطانیہ میں ملاقات کی اور فن و ثقافت پر تبادلہ خیال کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے فن، ثقافت اور کھوئی ہوئی اقدار کو بحال کر سکتے ہیں۔
معروف اداکار نے کہا کہ وہ گزشتہ 40سال سے کام کررہے ہیں اور پاکستان کی فن اور ثقافتی اقدار کو فروغ دینے کے لیے بڑی لگن کے ساتھ ملک کی خدمت کررہے ہیں۔ توقیر ناصر نے کہا کہ موجودہ ڈراموں میں سکرپٹ اور مواد کی کمی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ 80اور 90کی دہائی کے ڈراموں میں اور آج کے ڈراموں میں بڑا فرق ہے۔ معروف اداکار نے کہا کہ اس وقت ٹیکنالوجی اور پیسہ کافی ہے لیکن ڈرامے اپنا معیار کھو چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی کا ایک چینل تھا اور ماضی میں بہت معیاری ڈرامے پیش کیے جاتے تھے۔
انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی تجربہ کار لوگوں کے ساتھ بڑا سیٹ اپ ہے۔ توقیر ناصر نے بتایا کہ انہوں نے 800 روپے کے چیک سے کام شروع کیا ہے۔ معروف ڈرامے لکھنے والوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فنکار رائلٹی سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 25 سالوں میں ہم نے اصولوں اور اقدار کو کھو دیا۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی کے ڈراموں کو بحال کیا جا سکتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی تمام سہولیات کے ساتھ سب سے بڑا سیٹ ہے لیکن اس وقت فائدہ نہیں اٹھایا جا رہا ہے۔آج بھی ماضی کی طرح اچھے ڈرامے بنائے اور پیش کئے جاسکتے ہیں۔ تھوڑی سی توجہ کے ساتھ پی ٹی وی کو زندہ کر کے دوبارہ رول ماڈل بنا سکتے ہیں۔
توقیر ناصر نے کہا کہ بیرون ملک فن و ثقافت کو فروغ دینے کی اشد ضرورت ہے اس سلسلہ میں ثقافتی ادارے اپنا کردار ادا کرسکتے ہیں۔ انہوں نے تجویز دی کہ فن و ثقافت اور اپنے ورثے کو فروغ دینے کے لیے نیویارک اور لندن سمیت دنیا بھر میں میں ثقافتی مراکز قائم کیے جائیں کیونکہ ہمیں تاریخی فنون و ثقافت کو بین الاقوامی سطح پر فروغ دینے کی ضرورت ہے۔
توقیرناصر نے کہا کہ ہم نے اپنے فن اور ثقافت کو وہ اہمیت نہیں دی جس کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں بین الاقوامی ثقافتی مراکز کے قیام سے ملک کا مثبت رشخص دنیا کے سامنے پیش کرنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ہرشعبہ میں باصلاحیت لوگ موجود ہیں۔ضرورت اس بات کی ہے کہ ان کی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھایا جائے۔