You are currently viewing اپوزیشن جماعتوں کا مشترکہ صدارتی امیدوار لانے پر اتفاق ،باضابطہ اعلان کل کیا جائیگا

اپوزیشن جماعتوں کا مشترکہ صدارتی امیدوار لانے پر اتفاق ،باضابطہ اعلان کل کیا جائیگا

مری (ڈیسک ):متحدہ اپوزیشن نے صدر مملکت کیلئے مشترکہ امیدوار لانے پر اتفاق کیا ہے جس کا باضابطہ اعلان کل کیا جائیگا۔

 پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر سابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی زیر صدارت متحدہ اپوزیشن کے سربراہان کا اجلاس مری میں سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کی رہائش گاہ پر منعقد ہوا۔اجلاس میں پاکستان پیپلز پارٹی ، متحدہ مجلس عمل ، عوامی نیشنل پارٹی ، پختونخواہ میپ، پختون خوا ملی عوامی پارٹی ،نیشنل پارٹی، قومی وطن پارٹی اور پاک سرزمین پارٹی کے مرکزی رہنماؤں نے شرکت کی۔اجلاس میں مسلم لیگ (ن) کے سردار ایاز صادق، مریم اورنگزیب، احسن اقبال ،پیپلز پارٹی کے خورشید شاہ، راجہ پرویز اشرف، یوسف رضا گیلانی ،شیری رحمان، نوید قمر اور قمر زمان کائرہ اے این پی کے غلام احمد بلور،میاں افتخار حسین اور نیشنل پارٹی کے حاصل بزنجو کے علاوہ پاک سرزمین پارٹی اور قومی وطن پارٹی کے رہنما شریک ہوئے۔ پشتونخواملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی اے پی سی میں شریک نہیں ہوئے تاہم ٹیلی فونک رابطوں میں انہوں نے اے پی سی کے فیصلوں کو تسلیم کرنے کے موقف سے آگاہ کردیا ہے۔ذرائع کے مطابق مسلم لیگ (ن) نے اجلاس میں صدارتی انتخابات کیلئے پیپلز پارٹی کے نامزد امیدوار اعتزاز احسن کی جگہ متفقہ امیدوار لانے پر زور دیا تاہم پیپلز پارٹی نے قیادت سے مشاورت کیلئے چوبیس گھنٹوں کا وقت مانگا جس کے بعد مشترکہ صدارتی امیدوار کے انتخاب کے لیے مولانا فضل الرحمان کی سربراہی میں ایک پینل تشکیل دیا گیا ہے جس میں ایک رکن پیپلز پارٹی، ایک مسلم لیگ (ن) اور ایک تیسری اپوزیشن جماعت سے ہوگا، پینل صدارتی امیدوار کے لیے تین افراد کا انتخاب کرے گا، تینوں امیدواروں میں سے ایک کا حتمی انتخاب اپوزیشن جماعتیں کریں گی۔

اجلاس کے بعد اتحاد میں شامل جماعتوں کے رہنماؤں کے ہمراہ میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہاکہ پیپلز پارٹی کے وفد نے قیادت کو اعتماد میں لینے کیلئے وقت لیا ہے اور دیگر جماعتوں نے قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو یہ اختیار دیا ہے کہ وہ اتحاد میں شامل جماعتوں کی مشاورت سے اتوار کو باضابطہ طورپر الائنس کے صدارتی امیدوار کااعلان کریں ۔

(این این آئی)